معذورافراد کی بحالی ،متعدی امراض سے بچاؤ کیلئے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کی ضرورت ہے،ڈاکٹر عارف علوی
ZANJANI NEWS

پشاور (بیورو رپورٹ)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ معذورافراد کی بحالی ،متعدی امراض سے بچاو¿ کیلئے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کی ضرورت ہے، حکومت خصوصی افراد کو ٹیکنیکل ، ووکیشنل اور ہنرمندی کی تعلیم دے کر معاشی طور پر خودمختار بنانے پر توجہ دے رہی ہے، حقوق ایکٹ 2020 ءسے خصوصی افراد کو قومی ترقی میں شامل کرنے میں مدد ملے گی۔پیر کو صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی زیر صدارت گورنر ہاو¿س پشاور میں خصوصی افراد کی بہبود کے متعلق اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں معاونِ خصوصی صحت ڈاکٹر فیصل سلطان ، وزیرِ اعلیٰ خیبر پختونخواہ ،خصوصی افراد اور عالمی ادارہ صحت کے نمائندگان نے شرکت کی ۔صدر مملکت کو خصوصی افراد کی فلاح و بہبود اور پاکستان میں معذوری کی ابھرتی صورتحال کے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ یونیورسل ہیلتھ کوریج کا کم لاگت والا موثر پیکیج تیار کرنے والا پاکستان دنیا کا پہلا ملک بن گیاہے۔ اس موقع پر صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ معذور افراد کی بحالی اور متعدی امراض سے بچاو¿ کیلئے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد کیلئے معاون ٹیکنالوجی عالمی ، علاقائی اور ریاستی سطح پر مقبول ہو رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت خصوصی افراد کو ٹیکنیکل ، ووکیشنل اور ہنرمندی کی تعلیم دے کر معاشی طور پر خودمختار بنانے پر توجہ دے رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان افراد کیلئے 2000 روپے ماہانہ وظیفہ دینے کا اعلان کر چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد کے حقوق ایکٹ 2020 ءسے خصوصی افراد کو قومی ترقی میں شامل کرنے میں مدد ملے گی۔انہوں نے کہا کہ حکومت خصوصی افراد کی فلاح اور معاشرے میں ان کی شرکت بڑھانے کیلئے پرعزم ہے۔انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد کے ڈیٹا کی تیاری کے بعد انہیں آسان شرائط پر قرض فراہم کیا جائے گا، صدر مملکت نے کہا کہ پوسٹ گریجویشن کلاسوں میں داخلہ لینے والے خصوصی طلباءکو فیسوں کی معافی دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ خصوصی طلباءکی مدد کےلئے 50 ہزارروپے سکالرشپ فراہم کی جارہی ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *